فارمی مرغیوں کی استعمال شدہ فیڈ فصلوں میں کھاد کے طور پر استعمال ہونے لگی فیڈ میں سٹیرائیڈز ہونے سے وادی کے لوگوں کی صحت متاثر ہونے کا خدشہ

نوشہرہ وادی سون (نمائندہ الجلال)صحت قدرت کی طرف سے سب سے انمول تحفہ ہے لیکن موجودہ دور میں جیسے جیسے انسان خود ساختہ آسائشوں کا شکار ہوتا جارہا ہے صحت کے مسائل میں بھی اضافہ ہوتا جارہا ہے وادی سون میں گذشتہ سالوں سے کھاد کی بجائے پولٹری فارمز کی استعال شدہ فیڈ زرعی رقبے میں بڑے پیمانے پر استعمال کی جارہی ہے جسے شہری آبادی کے قریب اتارا جاتا ہے اس کی بدبو اتنی سخت کہ وہاں سے گذرنا محال ہے جس کا کاشتکاروں پر کوئی اثر نظر نہیں آتا اور خاص کر جب اس کو زمین میں شامل کیا جاتا ہے تو مقامی لوگوں کے لئے یہ انتہائی تکلیف دہ دن ہوتے ہیں اس کے استعمال سے فصل اور سبزیاں کی پیداوار میں اضافہ اور وقت مقررہ سے قبل اگنے سے اس کے صحت پر منفی اثرات مرتب ہو رہے ہیں ایک تجربہ کار کاشتکار کے مطابق اس نے یہ طریقہ کبھی بھی استعمال نہیں کیا کیونکہ اس کا وقتی فائدہ ہے جبکہ مستقبل میں زمین کے لئے نقصان دہ ثابت ہو گا اس کی ایک مثال گزشتہ سال گندم کی پیداوار میں دانوں کے سیاہ ہونے کی شکایات ہیں جبکہ ماضی میں کھاد کے استعمال سے ایسا کچھ دیکھنے میں نہیں آیا مقامی کاشتکاروںسمیت محکمہ زراعت ، صحت،کیلئے لمحہ فکریہ ہے کیونکہ لوگوں کی صحت اور ماحولیاتی اثرات وقتی مالی فوائد سے بڑھ کر ہیں یہاں کے مکینوں نے محکمہ ماحولیات کے اکابرین سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow