یونیورسٹی آف سرگودہا میں کنفیوشس انسٹی ٹیوٹ کا قیام ایک اعزاز ہے وائس چانسلر

سرگودہا ( فیصل عزیز شیخ سے )سرگودہا یونیورسٹی میں کنفیوشس انسٹی ٹیوٹ فال سمسٹر سے کام شروع کردے گا۔ اس ضمن میں کنفیوشس انسٹی ٹیوٹ کی نمائندہ سیلینہ وانگ نے وائس چانسلر ڈاکٹر اشتیاق احمد کو انسٹی ٹیوٹ پر آویزاں کرنے کیلئے تختی پیش کی جو کہ کنفیوشس ہیڈ کوارٹر ہن بن چین سے خصوصی طور پر سرگودہا یونیورسٹی لائی گئی۔ اس موقع پر وائس چانسلر ڈاکٹر اشتیاق احمد نے کہا کہ سرگودہا یونیورسٹی میں کنفیوشس انسٹی ٹیوٹ پاکستان کا پانچواں انسٹی ٹیوٹ ہوگا جو کہ چین کی ثقافت اور زبان کے ادراک میں سنگ میل ثابت ہوگا۔ کنفیوشس انسٹی ٹیوٹ ستمبر 2020ء فال سمسٹر سے باقاعدہ کام شروع کردے گا اور کلاسز کا آغاز کردیا جائے گا۔ اس دوران سٹاف کی تعیناتی کا عمل بھی جاری ہے اور دو چینی اساتذہ پہلے ہی یونیورسٹی میں اپنی خدمات سرانجام دے رہے ہیں۔ سیلینہ وانگ نے کہا کہ سرگودہا یونیورسٹی میں کنفیوشس انسٹی ٹیوٹ کے قیام سے یہاں کے لوگوں کو چینی ثقافت زبان سے ہم آہنگی ہوگی اور سرگودہا یونیورسٹی کے طلبہ کو چینی یونیورسٹیوں میں مشترکہ تحقیق،سکالر شپس سمیت دیگر گرانقدر مواقع میسر آئیں گے۔ پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف چائینہ سٹڈیز (PICS) کے ڈائریکٹر ڈاکٹر فضل الرحمن نے کہا کہ سرگودہا یونیورسٹی میں کنفیوشس انسٹی ٹیوٹ کا قیام یقینی طور پر ایک اعزاز ہے اور اس سے دنیا کے نقشے پر ابھرنے والی نئی عالمی طاقت چین کیلئے طلبہ کو مواقع دہلیز پر میسر آئیں گے اور مشترکہ ثقافتی اقدار نمایاں ہوں گی۔ یاد رہے کہ سرگودہا یونیورسٹی میں کنفیوشس انسٹی ٹیوٹ کا قیام اکتوبر2019ء میں وزیر اعظم عمران خان کے دورہ چین کے دوران ان کے چینی ہم منصب لی کی جیانگ کی موجودگی میں ایم او یو پر دستخط کے بعد عملی اظہار کا آئینہ دار ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow