سرگودہا زہریلہ شراب پینے سے ایک اور نوجوان جانبحق تعداد 20 ہوگئی

زہریلی شراب پینے سے ایک اور شخص جاں بحق، مجموعی تعداد 20 ہوگئی۔

سرگودھا : ملک میں کورونا وائرس سے بچاو کے اقدامات کے تحت لاک ڈاون کے باعث سرگودھا ریجن میں زہریلی شراب کی فروخت کا دھندہ جاری رہنے سے ایک اور نوجوان کی موت سے جانبحق کی تعداد 20 ہو گئی جبکہ سرگودھا اور بھکر میں الگ الگ مقدمات درج کر کے پولیس مصروف تفتیش اور شراب فروشوں کے خلاف سر گرم ہے۔زرائع کے مطابق سرگودھا ریجن کے علاقہ دریاخان نے جائیداد کے تنازعہ پر باپ بیٹے نے 32 سالہ نوجوان کوزہریلی شراب پلا دی جس کے باعث اس کی موت ہو گئی تو نوجوان محمد افضل کے باپ محمد اکبر نے اپنے بھائی محمد اصغر عرف گلو اور بھتیجے فرحان عرف بالو کے خلاف مقدمہ قتل درج کروا دیا جس میں ملزمان پر شراب فروشی اور جائیداد کے تنازعہ میں زہریلی شراب پلا کر قتل کرنے کا الزام ہے۔پولیس تھانہ دریا خان نے زیر دفعہ 302/337J/34 ت پ مقدمہ درج کر لیا۔اسی علاقہ میں سات سال قبل 2013 میں زہریلی شراب پینے سے 13 جاں بحق 5 افراد ہسپتال منتقل اور ایک شخص بینائی سے محروم ہوا تھا۔جبکہ سرگودھا شہر کے علاقوں ارین ایریا اور فیکٹری ایریا میں زہریلی شراب کی فروخت کا دھندہ جاری رہنے میں زہریلی شراب پینے سے 15 افراد کے جانبحق ہونے کی اطلاعات ہیں اور پولیس تھانہ سٹی نے بلاک 5 میں زہریلی شراب پینے سے چھ افراد کی موت اور دو کے ہسپتال پہنچ جانے پر شراب فروشوں کے خلاف زیر دفعہ 322/337J ت پ مقدمہ درج کر رکھا ہے اسی دوران ضلع خوشاب میں زہریلی شراب پینے سے چار افراد زندگی کی بازی ہار گئے۔ان واقعات پر وزیراعلی پنجاب اور آئی جی پنجاب کے نوٹس لے کر رپورٹ طلب کئے جانے پر پولیس زہریلی شراب فروخت کے مقدمات درج کر کے شراب فروشوں کے خلاف سرچ گرم عمل ہے اور متعدد مقدمات درج کئے جا رہے ہیں۔
Unn

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow