بند دوکانوں میں خواتین کی شاپنگ کوئی بڑا حادثہ ہوسکتا ہے انتظامیہ نوٹس لے

بند دکانوں میں خواتین کی شاپنگ ، بڑے حادثہ کو دعوت ، پولیس و انتظامیہ خاموش تماشائی

تاجروں نے لاک ڈاؤن کا توڑ نکال لیا سڑکوں پر چھوٹے ٹھیلے لگا کر کاروبار شروع کردیا جبکہ کئی دکانداروں نے شٹر اٹھا کر گاہکوں کو دکان میں داخل کرکے خریداری کے بعد باہر نکالنے کا سلسلہ بھی شروع کررکھا ہے شہریوں کا کہنا ہے کہ شٹر گرا کر خواتین کو دکانوں میں داخل کرنے سے ناخوشگوار واقعہ پیش آسکتا ہے اور خواتین کی عزت کو بھی خطرات لاحق ہوسکتے ہیں یہ انتہائی خطرناک ہے خواتین محرم کے علاوہ دکان کے اندر جانے سے گریز کریں تاکہ ناخوشگوار واقعہ سے بچا جاسکے , یو این این زرائع کے مطابق شہر میں دکانوں کے باہر کھڑے افراد شتر اٹھا کر خواتین کو دکان میں داخل کرتے ہیں اور اس کے بعد شٹر بند کردیا جاتا ہے ، یو این این کے مطابق اگر خواتین کو کپڑا یا کوئی چیز پسند نہ آئے تو دکاندار حضرات تب بھی انہیں روکنے کے لئے باہر پولیس کی موجودگی کا عذر پیش کرتے ہیں ، یہاں ونڈو شاپنگ میں دلچسپی رکھنے والی خواتین کو بھی مختلف حیلے بہانوں سے روک لیا جاتا ہے اور دکان کا شٹر اس وقت تک نہیں اٹھایا جاتا جب تک دکاندار خود باہر موجود اپنے ملازمین کو فون پر اطلاع نہیں دیتا ، اس وقت تک دکانددار حضرات پولیس اور انتظامیہ کی موجودگی کے بہانے خواتین کو شٹر بند دکان میں محصور کئے رکھتے ہیں ، دوسری جانب مقامی انتظامیہ اور پولیس بھی لاک ڈاؤن کے دوران مسلسل ڈیوٹی دیکر تنگ نظر آرہی ہے اور کسی حد تک عوام کو حالات کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے جس کی وجہ سے تاجروں نے اس کا ناجائز فائدہ اٹھا کر نہ صرف سڑکوں پر کاروبار شروع کررکھا ہے بلکہ خواتین کو بند شٹر کھول کر اندر داخل کرنے کے بعد شٹر ڈائون کرنے کے بعد تالہ لگا دیا جاتا ہے جو کہ کسی بھی بڑے سانحہ کو جنم دے سکتا ہے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow