مزدوروں کے مسائل کا ادراک ہے فیکٹریز کھولنے کیلئے وفاقی حکومت کو سفارشات بھیج دی ہیں وزیر اعلی پنجاب

مقبول احمد ملک سے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
مزدور کے مسائل کا ادراک ہے ، کاروبار اور صنعتوں کو کھولنے کے لئے وفاقی حکومت کو سفارشات پیش کررہے ہیں:عثمان بزدار
روڈ اور بلڈنگ سیکٹر کے علاوہ کنسٹرکشن سے متعلقہ دیگر انڈسٹری اورایکسپورٹ سے منسلک فیڈنگ انڈسٹری کو کھولنے کی سفارش دے رہے ہیں
اپنی لیبر کالونیاں رکھنے والی فیکٹریز ، پاور لومز، آئرن اینڈ سٹیل اور ہوم اپلائسسز انڈسٹری کو کھولنے کے لئے وفاقی حکومت سے درخواست کی ہے
مارکیٹوں اور بازاروں کی زوننگ کر کے مختلف ایام میں کھولنے کا فیصلہ فریقین سے مشاورت اور وفاقی حکومت کی ہدایات کے مطابق کیا جائےگا
بیرون ملک سے آنےوالے شہریوں کو صوبائی حکومتوں سے رابطے کے بعدمتعلقہ صوبے میں بھیج دیا جائےگا،ایکسپو میں بد انتظامی کی انکوائری کاحکم دیا جا چکا ہے
احساس کفالت کے تحت 28لاکھ خاندانوں میں 34ارب روپے تقسیم کئے ،انصاف امداد پیکیج کے تحت اگلے ہفتے سے25لاکھ خاندانوںکو 12ہزار فی کس ملے گا
مزید 10لاکھ خاندانوں کو رمضان پیکیج کے تحت3ہزار دیں گے ،90 ہزار کورونا ٹیسٹ کئے جا چکے ہیں،زائرین او رتبلیغی جماعت کے 90فیصد لوگ صحت یاب ہو چکے ہیں
8بی ایس ایل تھری لیول لیبارٹریاں فنکشنل ہوچکی ہیں،لاہور، راولپنڈی ، ملتان، گوجرانوالہ ، گجرات اورفیصل آباد میں سمارٹ سیمپلنگ کا پہلا فیز شروع ہوگا
میڈیاورکرز، پولیس اہلکاروں،انتظامی دفاتر،ہیلتھ ورکرز ،ٹی بی او رایڈز کے مریض ، ہسپتالوں میں زیر علاج حاملہ خواتین اور قیدیوں کے کورونا ٹیسٹ ہونگے
بڑے پیمانے میں سیمپلنگ سے کورونا کے پھیلاﺅ کاجائزہ لیں گے ،فیز ٹو میں Census Block میں سیمپلنگ کی جائےگی: ویڈیولنک پریس کانفرنس
لاہور2 مئی:وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کہاہے کہ مزدور کے مسائل کاادراک ہے- کاروبار اور صنعتوں کوکھولنے کے لئے وفاقی حکومت کو سفارشات پیش کررہے ہیں-آج وزیراعلیٰ آفس میںویڈیولنک پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے بتایا کہ حکومت پنجاب وفاقی حکومت کو لاک ڈاﺅن میں نرمی کے بارے میں سفارشات پیش کررہی ہے جس کا فیصلہ نیشنل کوآرڈینیشن کمیٹی کے اجلاس میں ہوگا -وزیراعلیٰ نے بتایاکہ ہم نے وفاقی حکومت سے گزارش کی ہے کہ روڈ سیکٹراور بلڈنگ کے علاوہ کنسٹرکشن سے متعلقہ دیگر انڈسٹری کو کھولنے کی اجازت دی جائے،اسی طرح ایکسپورٹ سیکٹر سے منسلک فیڈنگ انڈسٹری کو بھی کھولنے کی سفارش کی گئی ہے-پاور لومزاورایسی تمام فیکٹریز جن کے اندر اپنی لیبر کالونیاں موجود ہیں انہیں بھی کھولنے کی درخواست کی گئی ہے-آئرن اینڈ سٹیل انڈسٹری اور ہوم اپلائسسز انڈسٹری کو کھولنے کے بارے میں سفارش کی گئی ہے -وزیراعلیٰ نے کہاکہ صوبہ بھر کی مارکیٹوں اور بازاروں کو زونز میں تقسیم کر کے مختلف ایام میں کھولنے کے حوالے سے وفاقی حکومت کو اپنی سفارشات پیش کی گئی ہیںجن کے تحت ضلعی ا نتظامیہ ، ا نجمن تاجران، چیمبرآف کامرس اینڈ انڈسٹری اور دیگر سٹیک ہولڈرز کی مشاورت سے مارکیٹیں اور بازار کھولنے کی اجازت کا فیصلہ کیا جائے گا-وزیراعلیٰ نے بتایاکہ فیز۔ون میں ابتدائی طو رپر صوبے کے 6اضلاع لاہور، راولپنڈی، ملتان، گوجرانوالہ ،گجرات اور فیصل آباد میں سمارٹ سیمپلنگ کا آغاز کیا جا رہاہے-سمارٹ سیمپلنگ کے تحت میڈیا ہاﺅسز، قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکار ، انتظامی ا فسران کے دفاتر، ہیلتھ ورکرز، ٹی بی اور ایڈ ز کے مریضوں، ہسپتالوں میںزیر علاج حاملہ خواتین اورجیلوں میں بند قیدیوںکے کورونا ٹیسٹ کئے جائیں گے اور بڑے پیمانے پر سیمپلنگ کر کے کمیونٹی میں کورونا کے پھیلاﺅ کا جائزہ لیں گے – فیز-ٹو میں رینڈم سیمپلنگ کے تحت Census Block میں سیمپلنگ کی جائے گی-عثمان بزدار نے کہاکہ پنجاب میں اس وقت 62کروڑ روپے کی لاگت سے تیار ہونے والی 8 بی ایس ایل تھری لیب فنکشنل ہو چکی ہیںاور اب روزانہ 6ہزار کورونا ٹیسٹ کرسکیں گے ،گزشتہ روز پنجاب حکومت نے 3700 ٹیسٹ کئے ہیں-پنجاب میں اس وقت کورونا ٹیسٹنگ کٹس ،پی پی ایز کٹس او ربیڈز کی کوئی کمی نہیں- وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے بتایا کہ بیرون ممالک سے متعدد فلائٹس کے ذریعے سینکڑوں پاکستانی روزانہ وطن واپس آ رہے ہیں، ہوٹلوں اور دیگر قرنطینہ مراکز میں ایس او پی کے مطابق ان کی دیکھ بھال کی جا رہی ہے – بیرون ملک سے آنے والے دوسرے صوبوں سے تعلق رکھنے والے افراد کومتعلقہ صوبائی حکومتو ں سے رابطہ کر کے ائیرپورٹ سے ہی ان کے صوبوں میں بھیج دیا جائے گا- صوبہ پنجاب سے تعلق رکھنے والے افراد کو ان کے اضلاع میں روانہ کیا جائے گا اورانہیں 48گھنٹوں میں ٹیسٹ رپورٹ نیگیٹیو آنے کی صورت میں گھر بھیج دیا جائے گا- قرنطینہ میں رکھے گئے بیرون ملک سے آئے پاکستانیوں کی شکایت پر انکوائری کاحکم دےا جاچکاہے اس سلسلے میں حکومت پنجاب نے ایس او پی تشکیل دئےے ہیں جن پر عملدرآمد یقینی بنانے کے بعد گھروں میں بھی قرنطینہ کی ا جازت دی جائے گی اور اس ضمن میں وفاقی حکومت سے سفارش کی جائے گی-وزیراعلیٰ نے ایک سوال کے جواب میں کہاکہ ایکسپو سنٹر میں مبینہ بد انتظامی کے بارے میں انکوائری کاحکم دیا جاچکاہے اورجلد انکوائری رپورٹ آجائے گی-کورونا کے مریضوں کے ساتھ ہیں ان کے ساتھ کوئی زیادتی نہیں ہونے دیں گے-وزیراعلیٰ نے مزید بتایاکہ پنجاب میں تاحال کورونا کے6850کنفرم مریض ہیں،115 افراد کورونا کے باعث جاں بحق ہو چکے ہیں اور اب تک تقریباً90ہزار لوگوں کے ٹیسٹ کئے جاچکے ہیں،قابل اطمینان امر یہ ہے کہ 2206 مریض صحت یاب ہو کر گھر جاچکے ہیںجبکہ اب تک زائرین اور تبلیغی جماعت کے قرنطینہ میں رکھے گئے 90 فیصد لوگ صحت یاب ہوکر گھروں میں جاچکے ہیں-وزیراعلیٰ نے کہاکہ احساس کفالت پروگرام کے تحت ابھی تک 28لاکھ خاندانوں میں 34ارب روپے تقسیم کئے جا چکے ہیں اور امداد کا سلسلہ ابھی جاری ہے-اگلے ہفتے سے انصاف امداد پیکیج کے تحت 25 لاکھ خاندانوں میں 12ہزار فی کس امداد کی فراہمی شروع ہوجائے گی – اس کے علاوہ مزید 10لاکھ خاندانوں کو رمضان پیکیج کے تحت 3ہزار روپے فی کس دئےے جائیں گے – لاک ڈاﺅ ن کی وجہ سے صوبہ بھر میں غریب ،مزدور اورمحنت کش دیہاڑی دار طبقہ سب سے زیادہ متاثر ہو رہا ہے- ہمیں ان کی مشکلات کا ا ندازہ ہے اور ہم ان کا ازالہ کرنے کے لئے یکسو ہیں-ایک سوال کے جواب میں وزیراعلیٰ نے بتایاکہ پنجاب کی کابینہ کمیٹی برائے کورونا کنٹرول کی روزانہ میٹنگ ہوتی ہے اور صورتحال کو دیکھ کر فیصلے کئے جاتے ہیں-انہوںنے بتایاکہ کورونا وباءسے نمٹنے کے لئے کام کرنے والے لوگوں کو اضافی تنخواہ دی جائے گی-پنجاب میں اس وقت جزوی لاک ڈاﺅن ہے اورہم غریب آ دمی کی مشکلات کو کم کرنا چاہتے ہیں، اسی لئے صوبے میں ذخیرہ اندوزوں او رناجائز منافع خوروں کے خلاف بھی کارروائی کا حکم دے دیاہے-صوبائی وزراءڈاکٹر یاسمین راشد اور میاں اسلم اقبال نے بھی صحافیوں کے سوالوں کے جواب دئےے-صوبائی وزراءراجہ بشارت ،ڈاکٹر یاسمین راشد، میا ںاسلم اقبال،ہاشم جواں بخت، فیاض الحسن چوہان،چیف سیکرٹری ،انسپکٹر جنرل پولیس اور متعلقہ حکام بھی اس موقع پر موجود تھے-
٭٭٭٭٭

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow