سرگودہا میں بے اختیار ڈی پی او کی تعیناتی ۔۔۔۔تحریر شہزاد شیرازی

سرگودہا میں بے اختیار ڈی پی او کی تعیناتی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔سرگودہا پولیس میں عجیب سی بے چینی نے جنم لے لیا ہے ویسے تو یہ بے چینی نئی نہیں ہے ڈی آئی جی حامد مختار گوندل مرحوم اور شیخ عمر دور سے آر پی او آفس اور ڈی پی او آفس میں ایک تناؤ جاری ہے جس کی پاداش میں پہلے بھی کئی ار پی او اور ڈی پی او اس کی بھینٹ چڑھ چکے ہیں ابھی حال ہی میں میں ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر عمارہ اطہر اور آر پی او سرگودہا کے درمیان موجود سرد جنگ عمارہ اطہر کے تبادلے پر اختتام پذیر ہوئی اور نئے آنے والے ڈی پی او سرگودہا فیصل گلزار اسی دباؤ کے نیچے آکر کام کررہے ہیں اور اس وقت ڈی پی او آفس عملاً آر پی او آفس سے ڈرائیو ہو رہا ہے پورا محکمہ پریشانی سے دوچار ہے کہ انہیں کس طرف سے احکامات لینے ہیں پچھلے دنوں ایک انسپکٹر کا جونئیر سب انسپکٹر کے نیچے کام کرنے سے انکار نے بھی ایک ڈسپلن فورس کیلئے سوالیہ نشان ضرور چھوڑا ہے ڈی پی او فیصل گلزار اچھی شہرت رکھنے والے آفیسر ہیں لیکن آر پی او آفس کا دباؤ ان پر واضح نظر آرہا ہے اور ذرائع کا کہنا ہے کہ ضلع بھر میں موجود ایس ایچ اوز کی ٹیم کے فیصلے بھی آر پی او آفس میں ہوئے ہیں اور ڈی پی او نے صرف ان پر سائن کئے ہیں اگر سرگودہا جیسے بڑے ضلعوں کو ریجن دفتر سے چلایا جانا مقصود ہے تو پھر ڈی پی او کا عارضی چارج کسی ڈی ایس پی عہدے کے آفیسر کو دے دیا جائے تاکہ محکمے کا ابہام دور ہو اور انہیں پتہ ہو کہ ان کا موجودہ قبلہ ڈی پی او آفس نہیں آر پی او آفس ہے اس سے محکمے کی کارکردگی کو مزید بہتر بنایا جاسکے گا ۔۔۔۔۔۔شہزاد شیرازی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow