ذخیرہ کی گئی گندم تک ہر صورت پہنچیں گے ذخیرہ اندوزوں کو وارننگ دیتا ہوں گندم باہر لے آئیں واجد حسین شاہ ڈائریکٹر فوڈ پنجاب

سرگودہا (18 مئی 2020)۔ڈائریکٹر فوڈ پنجاب واجد علی شاہ نے گندم کے ذخیرہ اندوزوں کو خبردار کیا ہے کہ وہ رضاکارانہ طو رپر ذخیرہ شدہ گندم سرکاری گوداموں میں جمع کروائیں بصورت دیگرحکومت ان کے ذخائر تک ہر صورت پہنچے گی اوران کے تمام ذخائر ضبط کر لے گی او رپنجاب ہورڈنگ آرڈی نینس 2020 کے تحت ان کو پھوٹی کوڑی کی ادائیگی بھی نہیں کی جائیگی ۔ حکومت پر عزم ہے کہ وہ 45 لاکھ میٹرک ٹن گندم ہر صورت ذخیرہ کرے گی تاکہ شہریوں کو اناج کی قلت کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے کمشنر سرگودہا ڈویژن ڈاکٹر فرح مسعود کی زیر صدارت ان کے کانفرنس روم میں منعقدہ گندم خریداری اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اجلاس کے دیگرشرکاءمیں آرمی فورکور کے بریگیڈیروقار ‘ایڈیشنل کمشنر شہباز حسین نقوی ‘ ڈپٹی کمشنر سرگودہا عبداللہ نیئر شیخ ‘ دیگر تینوں اضلاع کے ڈپٹی کمشنرزمسرت جبین ‘ عمر شیر چٹھہ ‘ موسی رضا ‘ ڈائریکٹر زراعت فیض محمد کندی ‘ ڈپٹی ڈائریکٹر فوڈ ارشد وٹو ودیگر متعلقہ افسران شامل ہیں ۔ ڈائریکٹر فوڈ نے واضح کیا کہ حکومت گندم کی خرید میں کسی قسم کے یوٹرن پر یقین نہیں رکھتی اور ناکامی کی صورت میں سخت اقدامات اٹھائے جائیں گے ۔انہوں نے مصدقہ اطلاعات پر زمینداروں او رذخیرہ اندوزوں پر واضح کیاکہ حکومت نے گندم کی برآمد کا آپشن کھلا چھوڑ رکھا ہے ۔عالمی مارکیٹ میں گندم کی قیمت 216 ڈالر فی بوری سے زیادہ نہیں اگر حکومت نے برآمد کی تو زمینداروں او رذخیرہ اندوزوں کو بھاری نقصان کاسامناکر ناپڑسکتا ہے ۔انہوں نے مزید کہاکہ سرگودہا ڈویژن زرعی علاقہ ہونے کے ناطے یہاں پر گندم کی پیداوار 17 لاکھ میٹرک ٹن سے بھی زیادہ ہے جو ذخیرہ اندوزوں نے چند کوڑیوں کے مفاد کی خاطر غائب کر رکھی ہے جسے ہر صورت نکلوایا جائیگا ۔انہوں نے ڈویژنل وضلعی انتظامیہ پر زور دیاکہ وہ مجسٹریٹوں ‘ پولیس افسران او رپارٹیوںکے ذریعے زمینداروں کو جاری کیا گیا باردانہ گندم سمیت بازیاب کروائیں یاانہیں سلاخوں کے پیچھے دھکیل دیں ۔انہوں نے اس خدشے کا بھی اظہار کیاکہ سماج دشمن عناصر سرکاری باردانہ کو غیر قانونی دھندوںمیں بھی استعمال کرسکتے ہیں اس لئے اس کی بازیابی سو فیصد یقینی بنائی جائے۔ اجلاس میں بریگیڈیر وقار نے اعدادوشمار سے واضح کیا کہ سرگودہا ڈویژن میں 90فیصد تھریشنگ مکمل ہو چکی ہے تاہم دس فیصد تھریشنگ سے بھی ڈویژن کاگندم خریدار کا ہدف حاصل کیا جاسکتاہے ۔ اپنے صدارتی خطاب میں کمشنر نے چاروں اضلاع کے ڈپٹی کمشنر وں کو ہدایت کی کہ وہ تھریشر مالکان ‘ ملز انتظامیہ او رآڑھتیوں کا ڈیٹا اکٹھا کریں ان کے گودام ‘ کونے کھدرے تلاش کریں اور ان سے گندم کا دانہ دانہ نکلوائیں ۔اجلاس میں چاروں اضلاع کے ڈپٹی کمشنروں نے گندم خریداری کے حوالہ سے اقدامات ‘ اہداف ‘ پیداوار اوردیگر تفصیلات سے آگاہ کیا ۔انہوں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ گندم خریداری کے اہداف مکمل کر لئے جائیں گے جس کیلئے عید پر بھی عملہ خدمات سرانجام دے گا ۔
٭٭٭٭٭

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow