ڈاکٹر سپاہیوں کی طرح کورنا کے خلاف فرنٹ لائن پر جنگ لڑ رہے ہیں ڈاکٹر سکندر وڑائچ صدر پی ایم اے

 

سرگودھا (شفیق طاہر سے  ) پاکستان میں 1300 سے زائد ڈاکٹرز‘ نرسز و دیگر عملہ کرونا کا شکار ہو چکا ہے جبکہ ضلع سرگودھا میں بھی 3 ڈاکٹرز اور 3 نرسز کرونا وائرس کا شکار ہو چکے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار صدر پی ایم اے سرگودھا ڈاکٹر سکندر حیات وڑائچ‘ ڈاکٹر فواد حسین‘ ڈاکٹر غلام حسین فیضی‘ ڈاکٹر محمد آصف چوہدری اور ڈاکٹر ناصر اقبال میکن نے اپنے مشترکہ بیان میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ کرونا وائرس کے خلاف ڈاکٹرز‘ نرسز و پیرا میڈیکل سٹاف فرنٹ لائن سولجر بن کر مریضوں کی دیکھ بھال کر رہے ہیں۔ لیکن انتہائی تشویشناک بات یہ ہے کہ انہی فرنٹ لائن سولجرز کو وفاقی و صوبائی حکومتیں نظر انداز کر رہی ہیں۔ وفاقی و صوبائی سطح پر کئی محکموں میں کرونا کے خلاف کام کرنے پر رسک الاﺅنس و اعزازیہ دیا گیا ہے۔ لیکن ان فرنٹ لائن سولجرز کیلئے صرف اعلانات ہی کئے جاتے ہیں۔ بلکہ محکمہ صحت میں کام کرنے والے تمام ورکرز کی تنخواہوں کی کٹوتی شروع کر دی گئی ہے۔ ان رہنماﺅں نے مزید کہا کہ محکمہ صحت کے ارکان اپنی اور اپنی فیملیوں کی زندگیاں داﺅ پر لگا کر کرونا کے خلاف خدمات سر انجام دے رہے ہیں لیکن حکومت وقت کا یہ رویہ انتہائی افسوسناک ہے۔ ان رہنماﺅں نے وزیراعلیٰ پنجاب اور وزیر صحت پنجاب سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ بیورو کریسی کے چنگل سے نکل کر زمینی حقائق کو مد نظر رکھ کر کرونا کے خلاف لڑنے والے تمام ورکرز کو رسک الاﺅنس دیں۔ تاکہ محکمہ صحت کے تمام ورکرز پوری دلجمعی کے ساتھ عوام الناس کی خدمت کر سکیں۔

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow