کورونا کے باعث کریشر مارکیٹ پل 111کریش ہونے کا امکان حکومت کو چار ارب کے ریونیو شارٹ کا سامنا

سرگودھا(محمد تہور بلال اصغرسے) ناقص حکمت عملی اور محکمانہ مائنز میں بڑے لیز مالکان کی اجارہ داری کے باعث امسال پہاڑیوں کے ٹھیکوں کی ریونیو وصولی میں پونے 4ارب روپے سے زائد کے شارٹ فال کا سامنا ہے ،اورمالی سال کے اختتام کے پیش نظر پتھر مارکیٹ کے کریش کرجانے کا بھی قوی امکان پیدا ہو گیاہے ،ذرائع کے مطابق رواں مالی سال کے دوران پہاڑیوں کے ٹھیکے متنازعہ چلے آ رہے ہیں جس کے باعث116جنوبی،126جنوبی،123جنوبی،110جنوبی،59جنوبی،120جنوبی،48جنوبی، 113جنوبی، 118جنوبی سمیت پہاڑی کے مختلف حصوں پر لگ بھگ 30سے زائدٹھیکے تاحال نیلام نہیں ہو سکے ، کورونا لاک ڈاﺅن سے قبل تک تین مرتبہ نیلامیوں کےلئے ٹھیکیداران کو بلایا جا چکا ہے مگر سیاسی اثر و رسوخ رکھنے والے بڑے لیز مالکان کی مناپلی اور خوف کے باعث متذکرہ پہاڑیوں کے لئے کسی چھوٹے ٹھیکیدار نے بھی بولی نہ دی جس کی وہ سے یہ نیلامیاں موخر ہوتی آ رہی ہیں،ٹھیکے نہ ہونے کی وجہ سے لگ بھگ پچیس ہزارسے زائد مزدور بے روزگار ہیں، محکمہ مائنز حکام کا کہنا ہے کہ رواں ماہ کے آخر میں نیلامیوں کےلئے ایک مرتبہ پھر موقع دیا جا رہا ہے تاہم اگر پھر بھی متذکرہ پہاڑیوں کی بولی نہیں ہونے دی جاتی تو اس مد میں مجموعی طور پرکم از کم 3 ارب88کروڑ93لاکھ 35ہزار روپے کا قومی خزانے نقصان پہنچے گا اور پتھر مارکیٹ کے کریش کرجائے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow