موجودہ لاک ڈاؤن سمجھ سے بالا تر ہے عثمان عتیق

سرگودھا (بیورو رپورٹ) حکومت کی جانب سے لاک ڈاؤن کی منطق سمجھ سے بالاتر ہے ایک طرف تو حکومت کرونا وائرس کو روکنے کیلئے اقدامات کرنے کی پالیسی بنارہی ہے دوسری طرف دکانوں کو مخصوص اوقات میں کھول کر خود کرونا وائرس کی وباء کو پھیلنے کا موقع دے رہی ہے اگر کاروبار 24 گھنٹے کھولنے کی اجازت دی جائے تو بازاروں میں رش کم ہوگا اور ایس او پیز پر عملدرآمد کو بھی یقینی بنانے میں مدد ملے گی ان خیالات کا اظہار سیاسی سماجی شخصیت عثمان عتیق نے کیا انہوں نے کہا کہ پاکستان مسلسل لاک ڈاؤن کا متحمل نہیں ہوسکتا اس سے مختلف شعبہ ہائے کاروبار بند ہورہے ہیں جس کے سبب لوگوں کی اکثریت بے روزگاری کا شکار ہوکر جرائم کی طرف راغب ہونے پر مجبور ہورہی ہے اگر حکومت نے تمام کاروبار سابقہ روایت پر بحال نہ کئے تو آنیوالے دنوں میں اس کے خوفناک نتائج پوری قوم کو بھگتنا پڑینگے عثمان عتیق نے کہا کہ ضرورت اس امر کی ہے کہ تمام فیکٹریاں‘ کارخانے‘ ملیں‘ کاروباری ادارے‘ شاپنگ مالز‘ ٹرانسپورٹ‘ شادی ہالز‘ تعلیمی ادارے ایس او پیز کے تحت کھول کر کاروباری سرگرمیوں کو فروغ دیا جائے عوام کیساتھ ساتھ حکومت بھی لاک ڈاؤن کی وجہ سے معاشی بحران سے دو چار ہوسکتی ہے جس سے بچنے کیلئے 24 گھنٹے کاروبار کرنے کی اجازت دی جائے کم وقت میں رش زیادہ اور ایس او پیز کی دھجیاں بکھیر دی جاتی ہیں زیادہ اوقات میں رش کم ہوگا اور ایس او پیز پر بہتر انداز میں عملدرآمد ہوسکے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow