سرگودہا میں ایڈز کے مریضوں کے مسائل بڑھنے لگے پورا محکمہ صحت کورونا کے پیچھے پڑ گیا

سرگودھا(محمد تہور بلال اصغر سے)کورونا مصروفیات کے باعث ضلع سرگودھا جسے ایڈز کے تیزی سے پھیلاؤ کے حوالے سے حساس قرار دیا گیا تھا میں اس موذی مرض سے بچاؤ کا منصوبہ عدم توجہی کا شکار ہوتا دکھائی دے رہا ہے،جس سے ایڈز کے مرض میں مزید پھیلاؤ اور صورتحال سنگین ہونے کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے،ذرائع کے مطابق پنجاب ایڈز کنٹرول پروگرام کے تحت سرگودھا کو حساس اضلاع میں شامل کیا گیا تھا،جہاں ایڈز تیزی سے پھیل رہی ہے،اس وقت ایڈز کے 1708مریض رجسٹرڈ ہیں،جن میں سے 1204ڈی ایچ کیو ٹیچنگ اور 504ٹی ایچ کیو کوٹمومن کے تحت رجسٹرڈ ہوئے، جبکہ غیر رجسٹرڈ مریضوں کی تعداد ہزاروں میں ہے،اب تک سب سے زیاد ہ رجسٹرڈ 415ایڈز کے مریضوں کا تعلق کوٹ عمرانہ سے ہے،اس کے علاوہ مختلف علاقوں میں بھی ایڈز کے تیزی سے پھیلاؤکو روکنے کیلئے سرگودھا میں ایڈز ٹیسٹ کیلئے دو سکریننگ سنٹرز قائم کر رکھے ہیں جہاں سے مشتبہ مریضوں کے لاہور بھجوائے گئے ٹیسٹوں کی رپورٹ آنے میں دو ماہ تک لگ جاتے ہیں، اسی طرح تشخیص اور علاج معالجہ کے عمل میں بھی مختلف رکاوٹیں در پیش ہیں،اور کورونا کے باعث پیدا شدہ موجودہ صورتحال کے باعث اس جانب اب حکام کی توجہ کم ہے، جبکہ یہ امر باعث تشویش ہے کہ گزشتہ دو سالوں کے دوران ایڈز کے 129مریض جاں بحق ہو چکے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow