ٹڈی دل آرمی اور ضلعی انتظامیہ کی محنت سے ضلع سرگودہا سے ختم ہوگیا

آرمی ‘ انتظامی کاوشوں سے سرگودہا ڈویژن ٹڈی دل سے پاک ۔ کمشنر کو بریفنگ
ڈپٹی کمشنرز کو واٹر یوزر کمیٹیوں سے ریکوری کے علاوہ پانی چوروں ‘کھاد وزرعی ادویات کے ملاوٹ مافیا کے خلاف کریک ڈا¶ن‘ انہیں جیلوں میں بندکیا جائے
جعلی زرعی ادویات وکھادوں کی فیکٹریوں ‘ ڈیلروں کو بے نقاب کیا جائے ‘ ان کے ذخائر قبضے میں لئے جائیں ۔ڈاکٹر فرح مسعودکی ہدایت

سرگودہا (17 جون 2020)۔کمشنر ڈاکٹر فرح مسعود نے چاروں اضلاع کے ڈپٹی کمشنروں کو واٹر یوزر کمیٹیوں سے ریکوری کے علاوہ پانی چوروں ‘کھاد وزرعی ادویات کے ملاوٹ مافیا کے خلاف کریک ڈا¶ن کرنے او رانہیں جیلوں میں بند کرنے کی ہدایت کی ہے تاکہ کسانوں او رزمینداروں کو پیداواری نقصانات سے بچایا جاسکے ۔ وہ اپنے کانفرنس روم میں ڈویژنل زرعی مشاورتی کمیٹی وٹاسک فورس کے اجلاس کی صدارت کررہی تھیں ۔ اجلا س میں ایڈیشنل کمشنر شہباز حسین نقوی ‘ڈپٹی کمشنرزعبداللہ نیئر شیخ ‘ مسرت جبین ‘موسی رضا ‘ ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر میانوالی ‘ ڈائریکٹر زراعت فیض محمد کندی ‘ ڈائریکٹر واٹر مینجمنٹ افتخار چغتائی ‘ ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت سرگودہا ہاشم رضا ‘ ڈپٹی ڈائریکٹر پیسٹ وارننگ چوہدری اکرم کے علاوہ دیگر متعلقہ محکموں کے افسران بھی موجود تھے۔ کمشنر نے ہدایت کی کہ جعلی زرعی ادویات وکھادوں کی فیکٹریوں اور ڈیلروں کو بے نقاب کیا جائے اور ان کے ذخائر قبضے میں لئے جائیں ۔انہیں بلیک لسٹ کیا جائے یہ زراعت کیلئے زہر قاتل ہیں او رکسانوں کیلئے خسارے کاباعث ہیں ۔انہوں نے مزید ہدایت کہ پانی چوری کو روکاجائے اس میں ملوث محکمہ انہار کے افسران اور عملہ کے گرد بھی گھیرا تنگ کیا جائے ۔ان کی ملی بھگت کے بغیر پانی چوری ممکن نہیں ۔انہوں نے ٹیل کے کسانوں کو نہری پانی کی فراہمی کو یقینی بنانے کی ہدایت کی ۔ اجلاس میں اپنی بریفنگ میں ڈائریکٹر زراعت فیض محمد کندی نے بتایا کہ ضلع بھکر او رمیانوالی میں کپاس کاشت کی جاچکی ہے جبکہ ضلع بھکر میںمونگ کی پیداوار میں پنجاب بھر میں سر فہرست ہے ۔انہوں نے کہاکہ ضلع سرگودہا میں سٹرس کا پچاس فیصد پایاجاتا ہے جبکہ ضلع بھکر میں بھی سٹرس کو فروغ مل رہاہے انہوں نے بتایا کہ جعلی کھادوں کے خلاف کریک ڈا¶ن کے دوران 14 ایف آئی آر درج کروائی گئیں ۔ ڈویژن میں کھادوں کی کوئی کمی نہیں ۔کسان کارڈ کیلئے اب تک 50278 کسان رجسٹرڈ کئے جاچکے ہیں جبکہ پانی کے بارہ ہزار نمونے حاصل کئے گئے ۔انہوں نے بتایاکہ حکومت گندم او رگنے کی کاشت کے لئے مشینری پر پچاس فیصد سبسڈی دے رہی ہے جبکہ آرمی اور انتظامیہ کی کاوشوں سے ڈویژن لوکسٹ فری ہو گیاہے تاہم لکی مروت سے ضلع میانوالی کے سرحدی علاقوں کو خطرات ہیں جس کی مانیٹرنگ کی جارہی ہے ۔ اجلاس میں بتایاگیاکہ زرعی ادویات کے ضلع خوشاب او رمیانوالی میں سرگرم دو بڑے گروہ کے سرغنوں کو گرفتار کیاگیا ہے جبکہ دیگر بڑے گروہ کی گرفتاری کیلئے مانیٹرنگ جاری ہے ۔ اجلاس میں ڈائریکٹر پلانٹ پروٹکشن نے بتایا کہ گذشتہ چھ ماہ کے دوران 21 لاکھ37 ہزار سے زائد جعلی زرعی ادویات قبضہ میں لی گئیں جن میں سے ضلع سرگودہا سے پانچ لاکھ پچاس ہزار ‘ضلع خوشاب سے دو لاکھ 74ہزار ‘ ضلع بھکر سے دولاکھ 74 ہزار ‘ضلع میانوالی سے دس لاکھ38ہزار روپے کی ادویات شامل ہیں ۔ اجلاس میں چاروں اضلاع کے انتظامی افسران نے زراعت کی بہتری او رترقی کیلئے تجاویز پیش کیں۔
٭٭٭٭٭

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow