پٹرول کھلے عام بلیک ہونے لگا ضلعی انتظامیہ بے بس ہاتھ کھڑے کرلئے

سرگودھا (محمد تہور بلال اصغر سے )پیٹرولیم کی قیمتوں میں حالیہ کمی سرگودھا کے شہریوں کےلئے وبال جان بن گئی، 24ویں روز بھی شہر اور ضلع بھر میں پیٹرول کی بلیک مارکٹنگ عروج پر رہی، جبکہ شہریوں کا احتجاج بھی سامنے آنے لگا، تفصیلات کے مطابق سرگودھا میں انتظامیہ کی مبینہ ملی بھگت اور پیٹرول پمپ مالکان کی ہٹ دھرمی کے باعث نویں روز بھی پیٹرول کی شدید قلت رہی، اور بلیک میں پیٹرول کی قیمت 200روپے فی لیٹر تک پہنچ گئی، بیشتر پیٹرول پمپ حسب معمول بند رہے ، اور چند ایک فیلنگ اسٹیشنوں پر پیٹرول کی دستیابی کےلئے شہریوں کی دن بھر لمبی قطاریں لگی رہیں، ذرائع کے مطابق پیٹرول پمپ مالکان فراہم کردہ پچاس فیصد پیٹرول اوپن فروخت کر کے اچانک سٹاک ختم ہونے کا کہہ کر فروخت بند کر دیتے ہیں اور زیادہ تر رات کے وقت کین مافیا کو نوازا جاتا ہے ، کوٹ فرید روڈ، لاری اڈا روڈ، سلانوالی روڈسمیت مختلف علاقوں میں قائم پیٹرول پمپوں پر رات کے وقت یہی پیٹرول 140روپے فی لیٹر تک کین مافیا کو فروخت ہوتا ہے جو یہ کین مافیا 170روپے سے 200روپے فی لیٹر تک فروخت کر رہے ہیں، شہریوں کا کہنا تھا کہ انتظامیہ کاغذی کاروائیوں تک محدود ہے جبکہ مافیا کو کنٹرول کرنے کےلئے کسی قسم کے عملی اقدامات نہیں، لوگ شکایت بھی نہیں کر سکتے، کمزور ایڈمنسٹریشن کے باعث ملاوٹ شدہ پیٹرول شہری علاقوں میں 140اور دیہی علاقوں میں 200روپے فی لیٹر فروخت ہو رہا ہے،سفارشیوں کیلئے مقدار کی کوئی حد نہیں جبکہ عام لوگوں کو محدود مقدار میں دیا جاتا ہے ،ارباب اختیار کو فوری ایکشن لینا چاہئے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow