سرگودہا کے باسی پینے کے صاف پانی کی عدم دستیابی کیلئے سڑکوں پر نکل آئے

سرگودھا(رپورٹ:شیخ نعیم طاہر)سرگودھا میں انتظامیہ کی غفلت کے باعث کلین اینڈ گرین پاکستان کےحکومتی دعووں کے باوجود عرصہ دراز سے سیوریج کے گندے پانی میں ڈوبی شہری آبادیوں کے مکینوں نے سڑکوں پر نکل کر احتجاج کرتے ہوئے شدید نعرے بازی کی۔جن کا کہنا ہے کہ اس صورتحال،میں کورونا کی موجودگی میں رہائشی متعدد موذی امراض میں مبتلا ہو رہے ہیں۔زرائع کے مطابق حکومت کی طرف سے صاف ستھرے ماحول کے قیام کے بلندو بانگ دعووں کے باوجود سرگودھا شہر کے مکین مقامی انتظامیہ کی عدم توجہی کی وجہ سے طویل عرصہ سے سیوریج کے گندے پانی سے تالابوں کی مانند موجود گلیوں میں زندگی گزارنے پر مجبور ہیں۔جن میں شہری علاقے دین کالونی،جوہر کالونی،گلوالہ، کوٹفرید اور ان سے ملحقہ درجنوں رہائشی آبادیاں سیوریج کے گندے پانی میں ڈوبی ہوئی ہیں ۔ان آبادیوں کے مکینوں کا کہنا ہے کہ نکاسی آب کے لئے کروڑوں روپے کی لاگت سے منصوبہ جات بنائے گے لیکن سابق مئیر اسلم نوید اعوان نے اپنے کاروباری مفاد کی خاطر اپنی فروخت کی ہوئی رہائشی سکیموں تک پہنچا کر دیگر آبادیوں کو نظر انداز کر دیا۔جس کی وجہ سے ان آبادیوں کے ہزاروں مکین کی زندگی اجیرن بن چکی ہے۔جہاں جوہڑوں کی منظر کشی کرتی گلیوں سے ٹریفک گزرنا تو درکنار پیدل چلنا بھی محال ہے۔رہائشی گھروں سے نکلنے اور نمازی مساجد تک جا نہیں سکتے جبکہ گٹر ابلتے غلیظ پانی سے اٹھنے والے بدبووں کے بھبھکے کورونا وائرس کی موجودگی صورتحال میں مزید متعدد موذی امراض کو دعوت دینے کے مترادف ہے۔ان متاثرہ علاقوں کے سینکڑوں مکین سراپا احتجاج بن گے جہنوں نے اجنالہ بھلوال روڈ پر بینرز اٹھائے احتجاج کرتے ہوئے انتظامیہ کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔اس موقع پر مظاہرین کا کہنا تھا کہ اگر ان کی داد رسی نہ کی گئی تو مظاہرین اپنے حق کے لئے کسی اقدام سے گریز نہیں کریں گے۔https://youtu.be/Md-SmbrGrxA

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow